59

کشمیرکونسل ای یو نے جنیوا میں سکھ کنونشن کی حمایت کا اعلان کردیا

برسلز (پ۔ر)یورپ میں کشمیر کاز کے لیے متحرک تنظیم کشمیرکونسل ای یو نے آئندہ ماہ کے اوائل میں سوئٹرزلینڈ کے دارالحکومت جنیوا میں منعقد ہونے والے سکھ کنونشن اور سکھ احتجاجی مظاہرے کی حمایت کا اعلان کیا ہے۔واضح رہے کہ بیرون ممالک میں مقیم سکھ برادری یکم نومبر کو جنیوا میں ایک بڑا کنونشن منعقد کررہی ہے اور اسی دوران ایک جلوس بھی نکالا جائے گا جس کا مقصد بھارت میں سکھوں کے حقوق کی پامالی کے خلاف آواز اٹھانا ہے۔برسلز میں کشمیرکونسل ای یو کے سیکرٹریٹ میں ہونے والی ایک ملاقات میں چیئرمین کونسل علی رضا سید نے سکھ رہنماوں کو یقین دلایا کہ وہ جنیوا کے سکھ اجتماع کی بھرپور حمایت کرتے ہیں۔ انھوں نے کہاکہ سکھ اور کشمیری دونوں بھارتی مظالم کا شکار ہیں اور اسی وجہ سے دونوں کو ایک طرح کے مسائل درپیش ہیں۔ کشمیرکونسل ای یو نے ہمیشہ مظلوم کا ساتھ دیا ہے اور ظالم کے آواز اٹھائی ہے۔جنیوا میں سکھ کنونشن کا مقصد آئندہ سال نومبر میں باہر رہنے والی سکھ برادری کے مابین ایک مجوزہ ریفرنڈم کے لیے راہ ہموار کرنا ہے جس کے تحت سکھوں کے حق خودرادیت کے لیے سکھ ڈائس پورہ کی رائے حاصل کرنا ہے۔ملاقات کے دوران کشمیرکونسل ای یو کے سینئر عہدیداران چوہدری خالد محمود جوشی اور میرشاہجہاں، اور دونوں طرف سے دیگر رہنما موجود تھے۔ چیئرمین کشمیرکونسل ای یو نے کہاکہ سکھ برادری نے ہمیشہ کشمیرکاز کی حمایت کی ہے اور مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالیوں کے خلاف اپنی آواز بلند کی ہے۔انھوں نے کہاکہ ہم بھارتی پنجاب میں سکھوں کی نسل کشی اور بھارت کے دیگر علاقوں میں مقیم سکھوں کے ساتھ بھارت کے ظالمانہ رویے کی مذمت کرتے ہیں۔ ملاقات میں موجود سکھ رہنماوں نے کشمیرکونسل ای یو کی قیادت کو یقین دلایا کہ وہ مقبوضہ کشمیر کے مظلوم عوام جو اپنے حق خودارادیت کے لیے جدوجہد کررہے ہیں، کی حمایت جاری رکھیں گے۔دونوں طرف کے رہنماوں نے بھارتی فوج کی طرف سے مقبوضہ کشمیر میں تین ماہ سے جاری کرفیو کی مذمت کی اور عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ بھارتی حکام پر دبا ڈالے تاکہ کشمیریوں کا محاصرہ ختم ہو اور انہیں ان کا حق خودرادیت دلوایا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں