19

وزیراعلیٰ عثمان بزدارسے قائم مقام گورنر چودھری پرویزالٰہی کی ملاقات

لاہور(گجرات لنک رپورٹ) وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدارسے قائم مقام گورنر پنجاب چودھری پرویزالٰہی نے وزیراعلیٰ آفس میں ملاقات کی، جس میں باہمی دلچسپی کے ا مور، فلاح عامہ کے منصوبوں اور ورکنگ ریلیشن شپ کو مزید بہتر بنانے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ملاقات میں صوبے کے عوام کی فلاح و بہبود کیلئے ورکنگ ریلیشن شپ کو مزید بہتر بنانے پر اتفاق کیاگیا۔ دونوں رہنماؤں نے اتفاق کیا کہ صوبے کے عوام کی ترقی وخوشحالی کیلئے مل کر کام کرتے رہیں گے۔ ملاقات میں مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت تبدیل کرنے کے غیر قانونی و غیر آئینی بھارتی اقدام اور کشمیری عوام پر ظلم و ستم کی شدید مذمت کی گئی۔ دونوں رہنماؤں نے مقبوضہ کشمیر کے مظلوم عوام کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کیا۔ وزیراعلیٰ نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مل کر عوام کی خدمت جاری رکھیں گے اور اتحادی جماعت کو ساتھ لے کرچلیں گے۔ انہوں نے کہاکہ تنقید کی پروا نہیں صرف عوام کی خدمت کا ایجنڈا لے کر آگے بڑھ رہے ہیں، اپوزیشن نان ایشوز پر سیاست کر رہی ہے، شہبازشریف کے دور میں صوبے کے عوام کی بنیادی ضروریات اور ترجیحات کو نظر انداز کیا گیا۔ انہوں نے کہاکہ ہم عوام کی فلاح و بہبود کے وہ کام کر رہے ہیں جو سابق حکمران پچھلے دس برس میں نہ کر پائے، عوام کو کھوکھلے نعروں سے بہلانے کا دور گز رچکا ہے، ماضی میں غلط ترجیحات کی وجہ سے صوبے کے عوام کا بے پناہ نقصان کیاگیا، عوام کو ریلیف کی بجائے تکلیف دی گئی، تحریک انصاف کی حکومت نے پہلی بار عوامی ترجیحات کا درست تعین کیا ہے، ہماری نیت نیک اور سمت درست ہے، پاکستان تبدیلی کی راہ پر چل پڑا ہے، نیا بلدیاتی نظام عوامی خدمت کو نئی جہت دے گا، اختیارات عوام کے حقیقی نمائندوں کو نچلی سطح پر منتقل کر کے بلدیاتی نظام کو نئے خطوط پر استوار کیا جارہاہے، تحریک ا نصاف کی حکومت ایسا بلدیاتی نظام لا رہی ہے جس سے عام آدمی کو ریلیف ملے گا۔ قائم مقام گورنر چودھری پرویز الٰہی نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعلیٰ عثمان بزدار کے ساتھ تھے، ہیں اور رہیں گے، مل جل کرصوبے کے عوام کوریلیف فراہم کرنے کیلئے کام کریں گے، وزیراعلیٰ عثمان بزدار صوبے کے عوام کی خدمت کررہے ہیں، سابق دور میں ترقی کے نام پر تماشہ کیا گیا، نام نہاد خادم اعلیٰ کی شو بازیاں عوام کے سامنے بے نقاب ہو چکی ہیں، اپوزیشن کے پاس کوئی مثبت ایجنڈا نہیں، سابق دور میں صوبے کا حلیہ بگاڑا گیا جبکہ میرے دور حکومت میں پنجاب ترقی کی عملی تصویر پیش کررہا تھا، ہم نے صوبے کے خزانے کو سرپلس چھوڑا، بدقسمتی سے ماضی کی حکومت نے صوبے کو دیوالیہ کردیا، میرے دور کے مفاد عامہ کے منصوبوں کو ذاتی انا کی بھینٹ چڑھایا گیا، فلاح عامہ کے ا ن منصوبوں میں تاخیر کا نقصان صوبے کے عام آدمی کو ہوا۔#

اپنا تبصرہ بھیجیں