104

ناروے کو مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقو ق کی خلاف ورزیوں پر اپنا بھرپورکردار ادا کرنا ہو گا۔ نارویجن ممبرز پارلیمنٹ

اوسلو(عقیل قادر) یوم یکجہتی کشمیر کے موقع پر اوسلو میں پاک ویلفیئر آرگنائزیشن کے زیر اہتمام نارویجن پارلیمنٹ ہائوس کے سامنے ایک مظاہرہ کیا گیا ، سخت سردی اور منفی درجہ حرارت ہونے کے باوجود کثیر تعداد میں خواتین و حضرات نے اس میں شرکت کی۔ مظاہرے میں نارویجن پارلیمنٹ کے تین ممبران نے شرکت کی اورکشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیا۔ ایس وے پارٹی کے مرکزی رہنما اور ممبر پارلیمنٹ Petter Eide نے خطاب کرتے ہوئے مقبوضہ کشمیر میں ہونے والی انسانی خلاف ورزیوں کی مذمت کی اور کہا کہ انڈیا نے مقبوضہ کشمیر میں آرٹیکل 370 کو تبدیل کر کے دنیا کو یہ واضح پیغام دیا ہے کہ وہ بھی ایک سپر پاور ہے، انہوں نے کہا کہ امریکہ نے افغانستان و عراق میں کھلے عام انسانی حقو ق کی دھجیاں اڑائیں ہیں، انہوں نے واضح کیا کہ ان کی پارٹی پارلیمنٹ کے فلور پر حکومت پر مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے دبائو بڑھاتی رہے گی۔ لیبر پارٹی کی ممبر پارلیمنٹ Siri Gåsemyr Staalesen نے اپنے خطاب میں انڈیا سے مطالبہ کیا کہ وہ آرٹیکل 370 کو بحال کرے ، اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے پیش رفت کرے اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں بند کرے۔ سابق ممبر پارلیمنٹ لارش ریسے Lars riseنے بھی مطالبہ کیا کہ امریکہ اور اقوام متحدہ مسئلہ کشمیر کو حل کرانے کے لیے اپنا کردار ادا کرے۔ کشمیری نوجوان رہنما معز خان نے خطاب کرتے ہوئے ناروے کی حکومت پر زور دیا کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں ہونے والی انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کوروکنے میں اپنا کردار ادا کرے۔مظاہرے سے جن دیگر شرکاء نے خطاب کیا ان میں منہاج القرآن کے ڈائریکٹر علامہ اقبال فانی، اسلامک کلچرل سینٹر کے امام ڈاکٹر حامد فاروق، پروفیسر تُھورن سجاد، سیاسی رہنما طلعت بٹ اور مولانا محبوب الرحمن شامل ہیں ۔ممتاز سیاسی رہنما خالد محمود نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پوری دنیا میں پاکستانی قوم 5 فروری کو یوم یکجہتی کشمیر مناتی ہے اور وہ اس کے ذریعے کشمیریوں اور دنیا کو پیغام دیتی ہے کہ کشمیر کی آزادی تک پاکستانی انکے ساتھ کھڑے رہیں گے۔ نقابت کے فرائض علی چشتی نے احسن انداز میں سر انجام دیئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں