159

کشمیر ی عوام اس وقت تاریخ کے مشکل ترین دور سے گزر رہے ہیں: عمر میمن

لندن(نمائندہ خصوصی پرائیڈ آف ڈیمو کریسی انٹر نیشنل کے چیئرمین عمر میمن نے کہا ہے کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں صورتحال کو معمول پر لانے کے حوالے سے اپنا لائحہ عمل سامنے لائے۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے سینئر صحافیوں اور پاکستان پریس کلب بلجیم کے صدر عمران ثاقب چودھری،نائب صدر خالد حمید فاروقی اور اختر سیالوی سے اپنی قیام گاہ پر بات چیت کرتے ہوئے کیا۔عمر میمن نے کہا کہ پی او ڈی آئی کو مقبوضہ وادی کشمیر کی صورتحال پر گہری تشویش ہے۔کشمیری عوام اس وقت تاریخ کے مشکل ترین دور سے گزر رہے ہیں۔ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالیاں معمول کا حصہ بن چکی ہیں۔انسانی حقوق کی خلاف ورزیوںکے واقعات پوری دنیا کے لیے ایک سوالیہ نشان بن چکے ہیں۔اقوامِ عالم کو ایسے واقعات پر خصوصی توجہ دینی ہوگی۔اس موقعے پرپی او ڈی آئی یورپ کے کو آر ڈی نیٹر ملک محمد اجمل نے کہا کہ اقوام متحدہ کی ذمے داری ہے کہ وہ کشمیری عوام کی آواز بن کر سامنے آئے اور انسانی حقوق کی پامالیوں کو رکوانے میں کردار ادا کرے۔مقبوضہ کشمیر میں ابھی تک مسلسل کرفیو نافذہے جب کہ بھارتی لاک ڈاؤن کے باعث کشمیریوں پر زندگی بہت ہی مشکل ہو گئی ہے۔دنیا کی سب سے بڑی انسانی جیل میں کشمیری بنیادی انسانی حقوق سے محروم ہیں۔ سینئر صحافی اور پاکستان پریس کلب بلجیم کے صدر عمران ثاقب چودھری نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ وادی میں نہ کوئی رابطے کا ذریعہ ہے، نہ کوئی مواصلاتی نظام دستیاب ہے۔لوگ کھانے پینے کی اشیا اور دواؤں سے محروم ہیں،تعلیمی ادارے بند ہیں۔ کشمیری ماؤں اور بیٹیوں کی عزتیں محفوظ نہیں رہیں۔انھوں نے وادی کی صورت حال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مسئلہ کشمیر کو سفارتی سطح پر باہمی گفت و شنید کے ذریعے حل کیا جائے جس میں کشمیری عوام کے جائز حقوق کے تحفظ کی یقینی دہانی بھی کرائی گئی ہو۔انھوں نے مزید کہا کہ بھارت اقوامِ متحدہ کے نمائندوں کے وادی کے دورے کے مطالبے پر فوری طور پر عمل کرے۔ سینئر صحافی اور پاکستان پریس کلب بلجیم کے نائب صدر خالد حمید فاروقی نے کہا کہ بھارتی قابض افواج مقبوضہ کشمیر کے بچوں کو رات کی تاریکی میں اٹھا کر لے جاتی ہیں۔ انھوں نے مقبوضہ کشمیر میں بچوں پر بھارتی قابض فوج کی جانب سے ہونے والے سنگین مظالم کا تذکرہ بھی کیا ۔انھوں نے مزید کہا کہ وقت آ گیا ہے کہ عالمی برادری کشمیر میں جاری بھارتی ظلم تشدد اور بربریت کا حساب مانگے، جو لوگ بچوں کے حقوق کی خلاف ورزیوں پر خاموش رہتے ہیں وہ بھی شریکِ جرم ہیں۔ سینئر صحافی اختر سیالوی نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کا حل مقامی آبادی کی امنگوں کے مطابق ہونا چاہیے جس کے لیے بات چیت کا دروازہ ہمیشہ کھلا رہنا چاہیے۔ اس موقعے پر چیئرمین پی او ڈی آئی عمر میمن نے مہمانوں کو روایتی سندھی اجرک اور ٹوپی بطور ہدیہ پیش کیں جس پر مہمانوں نے میزبان عمر میمن کی پُر خلوص مہمان نوازی پر اُن کا شکریہ ادا کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں