کوٹلہ ارب علی خاں (غفوراحمد گل +عابد مرزا)گزشتہ روز عالمی وباء کرونا سے متاثرہ گجرات کے دوسرے جان بحق ہونے والے مریض خرم شہزاد آف بیر کھرانہ کی تدفین کے رقت آمیز مناظر کے بعد ایک اور افسوس ناک خبر اہل خانہ کے تقریبا چودہ افراد کے کروناء ٹیسٹ میں متوفی کے والد 73سالہ بزرگ صوبیدار مشتاق احمد کا بھی کروناء وائرس ٹیسٹ پوزیٹو آگیا،جواں سالہ خرم کی جدائی اور خوفناک تدفین کا صدمہ، والدہ سمیت اہل خانہ اور بیرون ملک مقیم بھائی (عامر سجاد سپین)غم سے نڈھال ایسے میں گھر کے سرپرست کی بھی موذی مرض میں لاحق ہونے کی اطلاع قیامت صغری سے کم نہ تھی، سیل شدہ محلہ بیر کھرانہ سے جوان بیٹے کی موت کے غم میں نڈھال متاثرہ بزرگ جوپہلے گردوں کے مرض میں بھی مبتلاہیں (ذرائع اور عزیز اقارب کے مطابق متوفی خرم شہزاد سپین سے اپنے والد محترم کی تیماداری اور علاج معالجہ کے لیے خصوصی طور آئے تھے)، انتظامیہ کی موجودگی میں عزیز بھٹی شہید ہسپتال گجرات منتقل کر دیاگیا ہے، جبکہ دوسری جانب حکومت کی جانب سے لاک ڈاؤن میں نرمی کے باوجود اہلیان علاقہ دفعہ 144کی کھلم کھلا خلاف ورزی میں مصروف عمل ہے، گجرات کے دوسر ے اور علاقہ کوٹلہ کے اپنی نویت کے پہلے جنازے کے قیامت خیز مناظراور اس کروناء کی تباہی کے آثار واضح ہونے کے باوجود کوٹلہ گردونواح کے باسی بے خوف خطر دیکھائی دیتے ہیں، لاک ڈاؤن میں نرمی پر اہلیان علاقہ کے عدم تعاون پر مقامی ایس ایچ او تھانہ ککرالی انسپکٹر لیاقت حسین گجرنے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ گجرات کے دوسرے کرونا کیس اور ہمارے علاقہ میں اپنی نویت کی پہلی موت اور تدفین کے عبرت ناک مناظر سے اہلیان علاقہ کو اسی وباء کی سنگینی کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے خوف سے احتیاط کرنی چاہیے اور دوسرے کو بھی احتیاط کی تدابیر دینی چاہیے مگر یہاں معاملہ بالکل برعکس ہے،اگر یہی صورت حال برقرار رہی تو عوام الناس کو لاک ڈاؤن میں نرمی کر کے جو ریلیف دیا گیا ہے ختم کر دیاجائے اور اگر پھر میں عدم تعاون کا سلسلہ جاری رہا تو مکمل ڈاؤن یا مجبورا کرفیوکا فیصلہ بھی کرسکتے ہیں، لہذا میڈیا کی وساطت سے اپیل ہے گھروں میں رہیں، احتیاطی تدابیر اپنائیں اور کروناسے نبٹنے کے لیے انتظامیہ کا ساتھ دیں۔

By admin

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔