کوٹلہ ارب علی خان(غفوراحمدگل+عابدمرزا)کرونا سے جنگ لڑتا خرم شہزاد زندگی کی بازی ہار گیا آبائی گاؤں بیرکھرانہ تدفین کر دی گئی تحصیل کھاریاں تھانہ ککرالی کوٹلہ کے نواحی گاؤں بیرکھرانہ کا رہائشی 30سالہ نوجوان خرم شہزاد ولدمشتاق احمد بیرون ملک سپین سے آیا ہوا تھا اور کرونا وائرس کا ٹیسٹ پازیٹیو آنے پر عزیز بھٹی شہید ہسپتال میں مورخہ 26 مارچ سےزیر علاج تھا۔ پہلا ٹیسٹ پازیٹیو آنے پر پازیٹیو وارڈ میں داخل کر لیا گیا چند دن قبل اچانک خرم شہزاد کی طبیعت بگڑ گئ جس پرمریض کو آئسولیشن میں منتقل کیا گیا.سانس کی تکلیف شدید پھر اس کی طبیعت بہتر ہونے لگی کافی دنوں بعد دوروز قبل دوبارہ سانس اکھڑنے لگی پھر بحال نہ ہو سکی اورخرم شہزاد مسلسل کئی روز تک کروناسے ایک طویل جنگ لڑتے گزشتہ روز عزیز بھٹی شہید ہسپتال میں بالآخر ہارگیا اس کے تینوں ٹیسٹ پازیٹیو آئے.مرحوم کو تحصیل انتظامیہ کے عملہ کی جانب سے حکومتی ہدایات کے مطابق تمام تر ضروری احتیاطی اقدامات کر کے وارثان کی موجودگی میں مختصراً نمازجنازہ کی ادائیگی کے بعد اس کے آبائی گاؤں میں دفن کردیا گیا خرم شہزاد کی فیملی کے 14 لوگوں کے سیمپل ٹیسٹ کے لئے بھجوائے گئے ہیں جن کی رپورٹس کا انتظار ہےاس موقع پر تحصیل انتظامیہ کی جانب سے اہل خانہ اور وارثان سے افسوسناک واقعہ پر اظہار افسوس کیا گیا اور عوام الناس کے لیے جاری احتیاطی بیان میں بتایا گیا ہے کہ آپ سب کو معلوم ہے کہ کرونا وائرس انتہائی تیزی سے ایک شخص سے دوسرے شخص تک پھیلتا ہے اس لیے عوام الناس سے پرزور اپیل ہے کہ اپنے گھروں میں رہیں اور غیر ضروری میل جول سے اجتناب کریں۔ اپنے ہاتھوں کو بار بار صابن سے دھوئیں اور اس سے بچاؤ کے لئے احتیاطی تدابیر اختیار کر یں۔ دعا ہے کہ اللہ پاک ہم سب کی حفاظت فرمائے اور ہم سب کو اس بیماری سے دور رکھے اور جو اس بیماری میں مبتلا ہیں ان کو جلد صحتیابی عطا فرمائے۔آمین

By admin

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔