گجرات(پ ر) حکومت پنجاب کی ہدایات کے مطابق سموگ کی روک تھام کیلئے جاری اقدامات کے دوران ضلع میں آلودگی اور سموگ کا باعث بننے والے 27صنعتی یونٹس سیل، 13بھٹہ خشت مالکان کے خلاف مقدمات درج،دھواں چھوڑنے والی 61گاڑیوں کے چالان کر دیے گئے، صوبائی حکومت نے سموگ اور آلودگی کا باعث بننے والوں کے خلاف جرمانہ کی رقم میں بھی اضافہ کر دیا گیا ہے، ان خیالات کا اظہار ڈپٹی کمشنر مہتاب وسیم اظہر نے ضلعی انسداد سموگ کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر فنانس ظہیر لیاقت، اسسٹنٹ کمشنرز وقار حسین خاں، فیصل عباس مانگٹ، خالد عباس سیال، احسن ممتاز، ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت توسیع ڈاکٹر عرفان اللہ وڑائچ و دیگر افسران بھی موجود تھے۔ ڈپٹی کمشنر مہتاب وسیم اظہر نے بتایا کہ فصلوں کی باقیات جلانے والوں کے خلاف مقدمہ اور پچاس ہزار روپے جرمانہ عائد ہوگا، آلودگی اور سموگ کا باعث بننے والے صنعتی یونٹس، بھٹہ خشت کیخلاف جرمانہ کی رقم بڑھا دی گئی ہے اور اب ان پر پچاس ہزار روپے سے ایک لاکھ روپے تک جرمانہ عائد کیا جاسکتا ہے، دھواں چھوڑنے والی گاڑیوں کے خلاف جرمانہ کی رقم ایک ہزار روپے سے بڑھا کر دو ہزار روپے کر دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پنجاب کی ہدایات کے مطابق کوڑا کرکٹ کو آگ لگانے کی صورت میں متعلقہ میونسپل کمیٹی کے چیف آفیسر کے خلاف پیڈا ایکٹ کے تحت محکمانہ کاروائی ہوگی، ضلع میں سرکاری گاڑیوں کے استعمال میں ہر ممکن کمی کی جائے گی، سیکرٹری آر ٹی اے اور ٹریفک پولیس دھواں چھوڑنے والی گاڑیوں کے خلاف موثر کریک ڈاؤن کریں، انڈسٹریل یونٹس کی مانیٹرنگ کیلئے ٹیکنالوجی استعمال کی جائے گی۔ ڈپٹی کمشنر مہتاب وسیم اظہر نے کہا کہ سموگ کی صورتحال پر نظر رکھنے اور فوری مناسب اقدامات کے لئے ڈی سی آفس اور اے سی دفاتر میں کنٹرول روم قائم کر دیے گئے ہیں، ضلع میں ائیر کوالٹی انڈیکس ابتک اطمینان بخش ہے تاہم صورتحال خراب ہونے کی صورت میں ریلیف کمشنر پنجاب کے احکامات کے مطابق مزید اقدامات اٹھائے جاسکتے ہیں۔

By admin

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔